اب شیوسینا نے کہا ،وکاس تو پاگل ہوگیا ہے

سامنا نے بی جےپی کے ترقی کے دعوؤں کا مذاق اڑایا

ممبئی :(اسٹاف رپورٹر) شیو سینا نے ایک بار پھر اپنے ترجمان سامنا کے اداریے میں مودی سرکار پر حملہ بولا ہے ۔ سامنا نے اداریے میں لکھا ہے گجرات کے وکاس کا کیا ہوا ہے ؟یہ پوچھتے ہی وکاس پاگل ہوگیا ہے ‘ ایسا خود گجرات کے عوام کہہ رہے ہیں۔ صرف گجرات ہی کیوں پورے دیش میں وکاس پاگل ہوگیا ہے کہ تصویر خود بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر سامنے لا رہے ہیں۔ سامنا نے آگے لکھا ہے کہ راہل گاندھی سے بڑی سمجھداری بھاری تبصرہ کیا ہے کہ وکاس کے بارے میں کچھ لوگوں نے بڑی بڑی بات کی ہے حالانکہ اس لئے وکاس پاگل ہوگیا ہے ۔ ای وی ایم میں گھپلہ مشین میں گھپلہ کرکے پیسوں کا استعمال کرکے انتخابات جیت لئے تو وکاس ہوگیا ایسا کچھ لوگوں کو لگتا ہے ، لیکن وکاس تو پاگل ہوگیا ہے ۔ منموہن سنگھ ، پی چدمبرم جیسے وزیر مالیات اور ماہرین معیشت نے کل تک جب یہی کہنے کی کوشش کی تب انہیں پاگل کہنے کی کوشش کی گئی ، لیکن اب تو خود بی جےپی کے ہی سابق وزیر مالیات یشونت سنہا نے ہی وکاس کی ہوا نکال دی ہے ۔ ملک کی شرح وکاس ۵ء۷؍فیصد ہونے کی بات کہی جارہی ہے جبکہ اصل میں یہ ۳ء۷؍فیصد ہے۔ یہ دعویٰ کرنے کے بعد یشونت سنہا بھی بے ایمان یا ملک کے غدار ٹھہرائے جاسکتے ہیں۔ روس میں اسٹالن حکومت کے خلاف بولنے والے ایک ایک رات میں غائب ہوجاتے تھے۔ یشونت سنہا کو سچ بولنے کی کیا سزا ملتی ہے یہ دیکھنا ہوگا۔سامنا نے آگے لکھا ہے کہ سنہا اگر غلط ہے تو ثابت کرو کہ ان کے ذریعے لگائے گئے الزامات غلط ہیں۔ بی جے پی کے بھی کئی لوگوں میں گرتی معیشت کے تئیں ناراضگی ہے، لیکن انجانے خوف کے سبب کوئی بولنے کو تیار نہیں ہے ۔ ملک کا بہت بڑا نقصان ہورہا ہے ۔ اخبار نے آگے لکھا ہے کہ سنہا کوئی ایری غیری شخصیت نہیں ہیں ، وہ اٹل بہاری واجپائی کی سرکار میں وزیر مالیات تھے اسلئے ان کا بیان صرف سوشل میڈیا پر مودی حکومت کا بچاؤ کرنے والے تنخواہ دار ملازمین کی فوج سے جھوٹا نہیں ثابت کیا جاسکتا ہے ۔ اخبار نے مزید لکھا کہ ہم نے اس بارے میں پہلے ہی آگاہ کردیا تھا لیکن تب ہم دیش دروہی قرار دئیے گئے تھے اب یشونت سنہا ملک کے غدار قرار دئیے جائیں گے۔