ہنی پریت نیپال میں‘ ادے پور سے گرفتار ساتھی نے کیا انکشاف

پولیس نے پردیپ کا موبائل فون ہنی پریت کے متعلق جانکاری حاصل کرنےکیلئے ضبط کیا

پنچ کولہ : روہتک جیل میںسادھوی آبروریزی کیس میں ۲۰؍ سال کی سزا کاٹ رہے سرسا ڈیرہ سچا سودا کے سربراہ گرمیت رام رحیم کی منہ بولی بیٹی ہنی پریت نیپال میں ہے ۔یہ انکشاف سچا سود کے ادے پور شاخ کے سربراہ پردیپ نے کیا ہے۔ پردیپ کو ہفتہ دیر رات ہریانہ پولیس نے حراست میں لیا۔ پولیس نے پردیپ کا موبائل فون بھی ضبط کرلیا ہے ، تاکہ ہنی پریت سے متعلق پولیس کو کوئی جانکاری مل سکے ۔پردیپ پر پنچ کولہ میں تشدد بھڑکانے کا الزام ہے ۔ ۲۵؍ اگست کو رام رحیم کو سی بی آئی کی پنچ کولہ عدالت نے آبروریزی کا قصوروار قرار دیا تھا ۔ رام رحیم کو قصوروار قرار دئے جانے کے بعد پنچ کولہ میں موجود ہزاروں ڈیرہ حامیوں نے جم کر تشدد کیا تھا ، جس میں ۳۰؍سے زیادہ افراد کی جانیں تلف ہوگئی تھیں ۔پردیپ نے پولیس کو بتایا ہے کہ اس کو سرسا میں واقع ڈیرہ صدر دفتر سے پنچ کولہ میں بھیڑ اکٹھا کرنے کا ہدف ملا تھا۔ بھیڑ اکٹھا کرنے کیلئے پردیپ نے لوگوں کو ۲۵؍، ۲۵؍ہزار روپے دینے کا لالچ دیا اور انہیں بس کے ذریعہ ادے پور سے پنچ کولہ لے کر گیا تھا۔خیال رہے کہ ہنی پریت رام رحیم کی گود لی ہوئی بیٹی ہے ۔ تاہم ہنی پریت کے سابق شوہر نے ہنی پریت اور رام رحیم کے درمیان ناجائز تعلقات کا الزام لگایا تھا ۔ رام رحیم نے ہنی پریت کو اپنی فیزیوتھریپسٹ بتاتے ہوئے اسے اپنے ساتھ جیل میں رکھنے کا بھی انتظامیہ سے مطالبہ کیا تھا۔دونوں کے درمیان ناجائز تعلقات کا انکشاف ہونے کے بعد سے ہی ہنی پریت فرار ہے ۔