ستیہ پال ملک نے بہار کے۳۸؍ ویں گورنر کی حیثیت سے لیا حلف

وزیر اعلیٰ نتیش کمار،نائب وزیر اعلیٰ سشیل کمار مودی نے مسٹر ملک کو مبارکباد دی

پٹنہ:(ایجنسی) سابق مرکزی وزیر ستیہ پال ملک نے آج بہار کے 38ویں گورنر کا حلف لیا۔ مسٹر ملک کو یہاں راج بھون کے راجندر منڈپ میں منعقد ایک تقریب میں پٹنہ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس راجندر مینن نے ریاست کے 38ویں گورنرکے طور پر عہدہ اور رازدار ی کا حلف دلایا۔ اس موقع پر موجود ریاست کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار،نائب وزیر اعلیٰ سشیل کمار مودی،سابق وزیر اعلیٰ جیتن رام مانجھی،جنتا دل (متحدہ) کے جنرل سکریٹری کے سی تیاگی نے حلف برداری کے بعد مسٹر ملک کو مبارکباد دی۔ اس موقع پر دیگر وزرا، قانون ساز کونسل کے ممبران اورمتعدد سینئر افسران بھی موجود تھے۔سابق گورنر رامناتھ کووند کے ملک کا صدر منتخب ہونے کے بعد مغربی بنگال کے وزیراعلی کیشری ناتھ ترپاٹھی کو بہار کی بھی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔ اس کے بعد صدر کووند نے 30ستمبر 2017 کو مسٹر ملک کو بہار کا گورنر مقرر کیا۔ خیال رہے کہ 24جولائی 1946کو اترپردیش کے باغپت ضلع میں ہسواد اگاوں کے کسان کنبہ میں پیدا ہوئے مسٹر ملک کو سیاست کا طویل تجربہ رہا ہے۔ وہ 1974-77تک اترپردیش اسمبلی کے رکن رہے۔ اس کے بعد 1980-84 اور 1986-89کے دوران وہ اترپردیش سے ہی دو مرتبہ راجیہ سبھا کے رکن منتخب ہوئے ۔ وہ 1989-90کے دوران نویں لوک سبھا میں علی گڑھ سے رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے۔میرٹھ یونیورسٹی سے سائنس اور قانون میں گریجوئیشن کی ڈگری اور پارلیمنٹ کے ذریعہ چلائے جانے والے آئینی اور پارلیمانی مطالعہ کے انسٹی ٹیوٹ سے پارلیمانی امور ڈپلوما لے چکے 71سالہ مسٹر ملک 21اپریل 1990سے 10نومبر1990کے دوران پارلیمانی امور کے مرکزی وزیرمملکت اور سیاحت کے وزیرمملکت رہے۔ اس کے علاوہ اپنی طویل سیاسی زندگی میں وہ کئی پارلیمانی کمیٹیوں کے صدر اور رکن بھی بنائے گئے۔ ساتھ ہی وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے سابق نائب صدر بھی رہ چکے ہیں۔