مودی ، ایسے لوگوں کو’’ فولو‘‘ نہ کریں

جو جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں ، وزیر اعظم کو این ڈی ٹی وی اینکر رویش کمار کا خط

 ممبئی ، (نامہ نگار): این ڈی وی ٹی کے اینکر رویش کمار کو جان سے مارنے کی دھمکی  دینے کے معاملہ نے شدت اختیار کر لی  اور  انہوں  نے وزیر اعظم مودی کو لکھے گئے اپنے سخت خط میں کہا ہے کہ وہ ایسے لوگوں کو سوشل میڈیا پر فولو کر رہے ہیں  جو نہ صرف گالیوں کی زبان استعمال کر رہے ہیں بلکہ جان سے مارنے تک کی دھمکیاں  دے رہے ہیں ۔ اپنے خط کے آخر میں رویش کمار نے مودی سے کہا ہے کہ اگر وہ نیرج دوے، نکھل دادچھ اور اشوک سونی کو جانتے ہیں تو ان سے سوال کریں کہ کیا وہ مجھے ہلاک کرنے کا منصوبہ بنا رہے ہیں ۔ رویش کمار نےفیس بک کی پوسٹنگ بھی ظاہر کی ہے جو پریشان کن ہے ۔ اس سلسلہ میں کانگریسی لیڈر اشوک چوان اور پرتھوی راج چوہان نے اس قسم کی دھمکیوں کی سخت مذمت کرتے ہو ئے کہا ہے کہ یہ شرمناک  ہے اور قوم کے چوتھے ستون پر براہ راست حملہ ہے اور اس معاملہ پر سنجیدگی سے غور کیا جانا ضروری ہے ۔ انہوں نے کہا ہے کہ اس سے قبل بھی کلبرگی، پنسارے ، دابھولکر اور گوری لنکیش جیسی شخصیتوں کا ہلاک کیا جا چکا ہے جو ملک کی جمہوریت کیلئے خطرناک ترین ہو تا  جا رہا ہے۔ رویش کمار نے اپنے لیٹر میں انہیں ملنے والی دھمکی کی تذکرہ کیا ہے ۔ انہوں  نے مودی سے سوال کیا ہے کہ وہ ایسے لوگوں کو سوشل میڈیا پر کیوں فولو کرتے ہیں  جو انہیں  یہ لکھتے ہیں کہ ’’ میں اب بھی اداس ہوں کہ تم زندہ ہو ‘‘۔ دادچھ نے گوری لنکیش کو ہلاک کئے جانے کے بعد اپین پوسنگ پر لکھا  تھا کہ ’ ایک کتیا کتے کی موت کیا مری کہ سارے پلے ایک سر میں بلبلا رہے ہیں‘۔ رویش کمار نے یہ بھی لکھا ہے کہ  ہندوستان ٹائمز کے سابق ایڈیٹر انچیف بوبی گھوش کو  چونکہ آپ پسند نہیں کرتے تھے  اس لئے انہیں ہٹا دیا گیا ہے ، مجھے یقین ہی نہیں آرہا ہے کہ ہندوستان کا وزیراعظم  ایک صحافی کو ہٹانے کیلئے اس طرح کا کام بھی کر سکتا ہے ۔  انہوں  نے وضاحت کرتے ہو ئے کہا کہ یہ بھی حقیقت ہے کہ وزیر اعظم سوشل میڈیا پر ہر ایک کو فولو کرنے اور اس کے ٹویٹ نہیں پڑھ سکتے ہیں۔